وادی مڈکلشٹ میں برفانی کھیلوں کا ٹورنمنٹ احتتام پذیر، اس ٹورنمنٹ میں علاقے کے بچیوں نے بھی حصہ لیا

137

چترال(گل حماد فاروقی) جنت نظیر وادی مڈکلشٹ میں برفانی کھیلوں کا ٹورنمنٹ سنو سپورٹس فیسٹیول احتتام پذیر ہوا۔ برفانی کھیلوں کا یہ دوسرا راؤنڈ تھا۔ اس ٹورنمنٹ کا اہتمام ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر نے کیا تھا۔ اس ٹورنمنٹ میں سنو سکینگ، سنو سکیٹنگ، میراتھن ریس، خواتین بیڈ منٹن وغیرہ شامل تھے۔ مقامی تنظیم نے اس ٹورنمنٹ میں حصوصی طور پر مڈگلشٹ کے بچیوں کو بھی کھیلنے کا موقع دیا تھا تاکہ وہ بھی ان کھیلوں میں حصہ لے سکے اور ان کی بھی حوصلہ افزائی ہو۔
سنو سکینگ اور سنو سکیٹنگ کے دوران لڑکوں کے ساتھ ساتھ لڑکیوں نے بھی برفانی میدان میں کھیل کر اپنی فن کا مظاہرہ کیا اور یہ ثابت کیا کہ ہم بھی کسی سے کم نہیں ہیں۔سنو سپورٹس فیسٹیول کے دوران بعض سیاحوں نے بھی قسمت آزمائی کی مگر وہ چند گز کے فاصلے پر جا کر اوندھے منہ جب گر پڑتے تو یہ شعر یاد آیا کہ، گرتے ہیں شاہ سوار ہی میدان جنگ میں، وہ طفل کیا کرے کہ جو گھٹنوں کے بل چلے۔


برفانی کھیلوں کے دوران کھلاڑیوں کی خون گرمانے کیلئے ثقافی شو کا بھی مظاہر ہ جاری تھا اور مقامی فن کار دف، ستار اور جیری کین کے ذریعے روایتی موسیقی بھی پیش کرتے تھے۔ اس دوران دستکاری کے مقامی فن پاروں کا نمائش بھی ہوا جس میں علاقے کے خواتین نے ہاتھ سے بنے ہوئے گرم بنیان، ٹوپی، شال وغیرہ نمائش اور فروخت کیلئے رکھے تھے۔
کھیل کے احتتام پر تقسیم انعامات کا بھی تقریب منعقد ہوا جس میں خیبر پحتون خواہ کی جانب سے سیاحت کا برانڈ سفیر کبیر افریدی مہمان حصوصی تھے جبکہ تقریب کی صدارت ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر فاروق اعظم نے کی۔ مہمانوں نے کامیاب کھلاڑیوں میں انعامات تقسیم کئے۔
ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر فاروق اعظم نے بتایا کہ ان کا مڈکلشٹ میں آنے کا بنیادی مقصد انڈر 21 کیلئے بچوں کے ساتھ ساتھ بچیوں کا بھی انتحاب کرنا ہے تاکہ وہ بھی ان کھیلوں میں حصہ لے سکے اور آگے بڑھ کر بین الاقوامی سطح پر اپنے ملک کا نام روشن کرے۔ اس کھیل کو دیکھنے کیلئے آنے والے سیاحوں نے ان کو بے حد سراہا اور یہ شکایت کی کہ یہاں تک آنے والی سڑکوں کی حالت بہت حراب ہے۔


برانڈ ایمبیسیڈر کبیر افریدی کا کہنا ہے کہ وہ پہلی بار مڈکلشٹ آئے ہوئے ہیں اور یہاں آکر ان کو بڑی خوشی محسوس ہوئی کیونکہ یہاں کے لڑکوں اور لڑکیوں دونوں میں کھیل کی نہایت قابلیت کے ساتھ ساتھ یہاں کے لوگ بھی بہت پر امن اور مہمان نواز ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ان بچوں اور بچیوں کو موقع دیا جائے اور ان کو تربیت کے ساتھ ساتھ کھیل میں استعمال ہونے والا سامان بھی فراہم کرے تو وہ دن دور نہیں کہ یہاں کے ذہین کھلاڑی بین الاقوامی سطح پر ان کھیلوں میں حصہ لے سکے۔
لوکل کونسل کے صدر نے کہا کہ یہاں جو بھی کھیل ہوتے ہیں تو اس میں مقامی لوگوں کو فائدہ پہنچنا چاہئے اگر سب کچھ باہر سے منگوایا جائے اور یہاں کے مقامی لوگ جو کام کرسکتے ہیں وہ ان سے نہ لے تو یہ بے انصافی ہوگی۔امید ہے آیندہ مقامی لوگوں کو بھی فائدہ پہنچایا جائے گا۔
ٹورنمنٹ کے آرگنائزر عدنان سمیع کا کہنا ہے کہ ان کی کوشش ہے کہ وہ لڑکوں کے ساتھ ساتھ علاقے کی لڑکیوں کو بھی کھیلنے کا موقع دے تاکہ وہ بھی ان مثبت اور صحت افزا سرگرمیوں میں حصہ لے سکے اور منفی سوچ اور منشیات کی لعنت سے بچ سکے۔

اس موقع پر ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر فاروق اعظم نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیل کود اور مثبت سرگرمیوں اور ہم نصابی کاموں میں بھی حصہ لے کیونکہ جن قوموں کا کھیل کا میدان حالی ہوتا ہے ان کے ہسپتال مریضوں سے بھرا رہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نوجوان نسل میں تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیل کا شوق پیدا کرنے اور ان کی ضروریات پوری کرنے کیلئے ہر ممکن کوشش کرتی ہے۔ اس نہایت دلچسپ کھیل اور رنگا رنگ تقریبات کو دیکھنے کیلئے کثیر تعداد میں سیاح برف پوش میدان میں جمع تھے اور مفنی پانچ ڈگری سنٹی گریڈ میں بھی ان کا خون گرم تھا۔مقامی لوگوں کے ساتھ ساتھ سیاحوں نے بھی حکومتی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وادی مڈکلشٹ کی سڑکیں جلد سے جلد تعمیر کی جائے تاکہ یہاں آنے والے کھلاڑیوں اور سیاحوں کو آمد ور فت میں تکلیف کا سامنا نہ ہو اور سیاحت کو فروغ دینے ہی سے اس پسماندہ علاقے سے غربت کا حاتمہ ہوسکے۔

Snow sports festival concluded at Madaklasht. Girls players also participated in the tournament.


By Gul Hamaad Farooqi


CHITRAL: The Snow Sports Festival, an ice sports tournament, concluded at Madaklasht valley. This was the second round of ice sports. The tournament was organized by the District Sports Officer Chitral. The tournament included snow skiing, snow skating, marathon races, women’s badminton and more. The local organization Azme Ali shan had specially given the opportunity to the girls of Midgalsht to play in this tournament so that they too could take part in these games and they would be encouraged.
During snow skiing and snow skating, boys as well as girls performed on the ice field and proved that we are no less than anyone. During the Snow Sports Festival, some tourists also tried their luck but When they went a few yards away and fell face down, the lion remembered that the king’s riders fall on the battlefield, what should a child do who walks on his knees.
There was also a cultural show to warm the blood of the athletes during the Ice Games, and traditional music was performed by local artists Duff, Sattar and Jerry Kane. There was also an exhibition of local handicrafts in which the women of the area displayed hand-made warm vests, hats, shawls etc. for display and sale.
A prize giving ceremony was also held at the end of the game in which Kabir Afridi, Tourism Brand Ambassador of Khyber Pakhtunkhwa was the chief guest while District Sports Officer Farooq Azam presided over the ceremony. The guests distributed prizes among the successful players.
Talking to our correspondent, District Sports Officer Farooq Azam said that the main purpose of his visit to Madaklasht is to select boys as well as girls for Under-21 games so that they too can participate in these sports and go further internationally. Let the name of our country shine on the surface. Tourists who came to see the game appreciated local playes immensely and complained that the condition of the roads leading up to here is very bad.
Brand Ambassador of KP Tourism Kabir Afridi says that this is his first visit to Madaklasht and he was very happy to be here because both the boys and girls here are very good at sports and the people here are very peaceful and hospitable. ۔ He said that if these boys and girls were given a chance and provided with training as well as sports equipment, the day would not be far when talented players would be able to participate in these sports at the international level.
The president of the Aga Khan local council said that whatever games are held here, the local people should benefit from it. If everything is brought in from outside and the locals do not take from them what they can do, it will be unfair. In the future, the local people will also benefit.
Tournament organizer Adnan Sami says he is trying to give boys as well as girls in the area a chance to play so that they too can take part in these positive and healthy activities and avoid the scourge of negative thinking and drugs. On this occasion, District Sports Officer Farooq Azam urged the people to take part in sports as well as positive activities and co-curriculam activities along with education as the hospitals of the nations remain full of patients where playgrounds are empty. ۔ He said that the provincial government was making every effort to create education among the youth as well as to create a passion for sports and meet their needs. A large number of tourists had gathered in the snow-covered field to watch this exciting game and colourful festivities and their blood was hot even at 5 degrees Celsius. Locals as well as tourists demanded from government agencies that The roads of Madaklasht should be constructed as soon as possible so that the players and tourists who come here do not face any inconvenience in coming and going and only by promoting tourism can poverty be eradicated from this backward area.

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: