پاک چین دوستی مستقبل میں ایک نئی اور روشن جہت اختیارکرے گی۔

38

نونگ رونگ ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی کی سربراہی میں کامسیٹس کے وفد کی چین کے نئے سفیر سے ملاقات۔

اسلام آباد(نمائندہ خصوصی)گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق پاکستان میں چین کےنئے سفیر نونگ رونگ نے پاک چین دوستی کو مستقبل میں ایک نئی جہت دینے کے لیےاپنے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا ہے کہ چین اپنے تمام تر وسائل کے ساتھ نصف صدی سے زائد عرصے پرمحیط تعلقات کو دنیا کے لیے رول ماڈل بنائےگا اوراس مقصدکے لیے کسی بھی روکاوٹ کو عبور کرنے سے دریغ نہیں کرے گا۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے گذشتہ روز کامسیٹس کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی کی سربراہی میں جانے والےکامسیٹس کےایک اعلی سطحی وفد کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا۔ چین کے نئے سفیر نے مزید کہا کہ چینی حکومت کامسیٹس کے رکن ممالک میں ادارہ سازی کے شعبے میں تحقیقی اور تعلیمی اداروں کے ساتھ ساتھ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی پارکس قائم کرنے اورچین کی وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے علاوہ بین الاقوامی سائنس تنظیموں کے چینی اتحاد کے ساتھ بھی مختلف مشترکہ پروگرامز کا آغازکرسکتی ہے۔چینی سفیر کے ساتھ تبادلہ خیال کے دوران کامسیٹس کے چار رکنی وفد میں میجر جنرل (ر) محمد طاہر ، مشیربرائےچین ڈیسک کے ساتھ کامسیٹس کےمشیر برائے پروگرام مسٹرتجمل حسین اوراسسٹنٹ ڈائریکٹر پروگرام،انجینئر قیصر نواب بھی موجود تھے۔ اسلام آباد میں چین کے سفارت خانے میں منعقدہ اس ملاقات میں سائنس اور ٹیکنالوجی سے متعلق پہلی سیکریٹری مسٹر جیاوی اور سفارتخانے میں ڈائریکٹر پولیٹیکل اینڈ پریس سیکشن باؤ ژونگ نے بھی شرکت کی۔ ملاقات کے دوران کامسیٹس کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی نے مسٹر نونگ رونگ کو پاکستان میں نیاء عہدہ سنبھالنے پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ کامسیٹس بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو منصوبے کے پس منظرمیں کثیرالجہتی منصوبے شروع کرنے کے لیےمزید امکانات کو تلاش کر سکتاہے۔انہوں نےاپنےمعززمیزبان کو بتایا کہ چین کامسیٹس کابانی رکن ہے اوراُسے پاکستان کی سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی وزارت سمیت کامسیٹس اوردیگر اداروں میں قانونی سطح پرنمائندگی حاصل ہے،جن میں ایکسی لینس کے مراکزبرائے آب و ہوا،ماحولیاتی سائنس کے بین الاقوامی مرکز(آئی سی سی ای) اور تیاآنجن انسٹی ٹیوٹ آف انڈسٹریل بائیو ٹیکنالوجی(ٹی آئی بی)شامل ہیں۔ڈاکٹر زیدی نے انہیں کامسیٹس کے ساتھ چین کے بھر پورتعاون سے بھی سے آگاہ کیا۔معزز سفیر کو بتایا گیا کہ کامسیٹس اور چینی وزارت سائنس ایند ٹیکنالوجی نے پائیدار ترقی کے لیے انفارمیشن اور سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے میدان میں تعاون کے لیے “ریشم روڈ انوویشن تعاون ” کے معاہدے پر بھی دستخط کررکھےہیں۔انہوں نے چین کےمعزز سفیر کو کامسیٹس کے 27 رکن ممالک اور 24 مراکز آف ایکسی لینس میں کامسیٹس کےپروگرامزاور دیگرسرگرمیوں سے بھی آگاہ کیا۔ملاقات کے دوران کامسیٹس کے وفد نے،چین کی وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے’’ٹارچ ہائی ٹیک انڈسٹری ڈویلپمنٹ سینٹر‘‘اور بین الاقوامی سائنس تنظیموں کے چینی اتحاد(اے این ایس او) کے ساتھ حالیہ تعاون پربھی گفتگوکی۔چینی سفیرمسٹر رونگ نے سائنس اور ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے کامسیٹس کے فعال کردار سے آگاہی پر ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی کاشکریہ ادا کرتے ہوئے اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ چینی سفارت خانہ مختلف امور پرادراک کے لیے ہرطرح کا تعاون فراہم کرےگا۔چینی سفیر نے کامسیٹس کے وفد کو آگاہ کیا کہ اس تعارفی ملاقات کے نتیجے میں انہیں کامسیٹس کے پروگرامز اور سرگرمیوں کے بارے میں جاننے کابھرپور موقع ملا جس سےچین کے سفارت خانے کومستقبل میں تعاون کی نئی راہیں تلاش کرنے میں مدد ملے گی۔ اس ملاقات میں یہ توقع بھی ظاہر کی گئی کہ خطے کے دونوں اہم ممالک ملکر جنوبی جنوب خطے میں پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کی رفتار کو مزیدتیز تر بنانے کے لیے اپنی ذمے داریوں کو پہلے سے زیا دہ بہتر طریقے سے نبھائیں گے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: