انٹیل کا 20 ارب ڈالرز کی چِپ ساز فیکٹری بنانے کا اعلان

مشہور ٹیکنالوجی کمپنی انٹیل نے امریکی ریاست اوہائیو میں 20 ارب ڈالرز کی نئی فیکٹری بنانے کا اعلان کر دیا۔

جمعے کو چِپ ساز کمپنی انٹیل نے کہا کہ وہ اوہائیو میں 20 ارب ڈالرز کی نئی فیکٹری میں سرمایہ کاری کرے گی، جو عالمی سطح پر استعمال ہونے والی چِپس کی قلت کو دور کرنے کی ایک کوشش ہوگی۔

کمپنی نے امریکا میں اہم ٹیکنالوجیکل اشیاء بنانے کا بھی اشارہ دیا ہے۔

انٹیل کی جانب سے لیا جانے والا یہ قدم وسطی اوہائیو میں ایک نیا ٹیکنالوجی کا گڑھ بنا سکتا ہے۔ کیوں کہ چِپ سازی سے متعلقہ کاروبار خطے میں نئی سہولیات اور ماہرین کے آنے کی راہیں کھولیں گے۔

انٹیل کا کہنا تھا کہ دو فیکٹریاں اس کے اپنے پروسیسر کی رسد کو پورا کریں گی جس کے ساتھ اس کا نیا فاؤنڈری بزنس جو دوسری فرمز کی ڈیزائن کی گئی چِپس بنائے گا۔۔

موجودہ چِپ فاؤنڈریز کے زیادہ تر ایشیاء میں بڑے پیمانے پر کسٹم-ڈیزائن چپس بناتی ہیں۔

اس کاروبار میں فی الحال تائیوان سیمی کنڈکٹر مینوفیکچرنگ کارپوریشن غالب ہے۔

انٹیل کے سی ای او پیٹرک گیلسِنگر نے وائٹ ہاؤس میں ایک تقریب کے دوران کہا کہ مستقبل کی پیداوری سائٹ کا مقصد متعدد ضروریات کو پورا کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چپِس کا وہاں بننا صرف سپلائی چین کے دباؤ کو کم نہیں کرے گا بلکہ امریکا کی نیشنل سیکیورٹی کو مزید مضبوط کرتے ہوئے ٹیک نوکریاں خطے میں لے کر آئے گا۔

کولمبس کے مشرق میں موجود لِکنگ کاؤنٹی میں ایک ہزار ایکیڑ پر بننے والی دو فیکٹریوں سے 3000 کمپنی نوکریاں-جن میں سے زیادہ تر ماہرین کی ہوں گی-اور 7000 تعمیراتی شعبے کی نوکریاں متوقع ہیں۔

imshehzadahmad@

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: