فضائی سفر کی مکمل بحالی 2024 تک ممکن نہیں: آیاٹا

بین الاقوامی ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (آیاٹا) نے کہا ہے کہ فضائی پروازوں کی کورونا وائرس سے پہلے والی صورتحال 2024 تک بحال نہیں ہو سکے گی۔
خبر رساں ادارے ’روئٹرز‘ کے مطابق ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ وائرس کی وجہ سے لگائی گئی سفری پابندیوں کے باعث سال 2020 میں مسافروں کی تعداد میں 55 فیصد کمی متوقع ہے، جبکہ اپریل میں 46 فیصد کمی کی پیشن گوئی کی گئی تھی۔

آیاٹا کے ماہر معاشیات برائن پیئرس کا کہنا تھا کہ توقع کے برعکس رواں سال کے دوسرے نصف میں بھی ایئر لائنز کی بحالی سست رہے گی۔ جون کے مہینے میں ہوائی جہاز سے سفر کرنے والےمسافرین کی تعداد 86.5 فیصد کم تھی جبکہ مئی میں91 فیصد کی کمی واقع ہوئی۔
ماہر معاشیات نے کہا کہ برطانیہ کا سپین سے آنے والے مسافروں کو قرنطینہ کرنے کے اچانک فیصلے نے غیر یقینی کی صورتحال پیدا کر دی ہے، جو فضائی کمپنیوں کی مکمل بحالی میں رکاوٹ کی ایک وجہ ہے۔
آیاٹا کا کہنا تھا کہ امریکہ اور ترقی پذیر ممالک میں کورونا پر قابو پانے میں ناکامی کی وجہ سے بھی فضائی آپریشن مکمل بحال ہونے کے امکانات متاثر ہوئے ہیں۔ عالمی فضائی سفر میں 40 فیصد نمائندگی امریکہ اور ترقی پذیر ممالک سے مسافروں کی ہوتی ہے۔

ماہر معاشیات برائن پیئرس نے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کاروبار کی غرض سے کیے جانے والا سفر بھی شاید کورونا سے پہلے والے حالات پر واپس نہ آ سکے۔
ان کا کہنا تھا کہ فضائی کمپنیوں کو کارگو کی آمدورفت پر زیادہ سے زیادہ انحصار کرنا پڑے گا تاکہ فضائی روٹس کو منافع بخش رکھا جا سکے۔
برائن رائن پیئرس نے بتایا کہ اکثر فضائی کمپنیاں اپنا زیادہ تر منافع پریمیم ادا کرنے والے مسافروں سے کماتی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: