امریکی ہٹ دھرمی نے 83 ملین ایرانیوں کی صحت داو پر لگا دی ہےٖ:حسن روحانی

ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ  نئی شرائط پر ادویات کی ملک میں آمد میں خلل سے 83 ملین آبادی کی صحت  امریکہ کے رحم و کرم پر ہے۔

 صدارتی ذرائع کے مطابق ، روحانی نے فن لینڈ کے صدر ساولی نینیستو سے ٹیلیفون پر رابطے کے دوران  یورپی یونین اور فن لینڈ سے ایران پر امریکی پابندیوں کی مذمت کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس کے لیے ضروری ادویات پرامریکی پابندیوں کی وجہ سے ہماری 83 ملین آبادی  کی صحت اس کے رحم و کرم پر ہے۔

روحانی نے کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ سے نئی پالیسیوں کا ظہور ہوا تھا جسے موجودہ امریکی حکومت نے یک طرفہ طور پر ختم کرتےہوئے ہمیں مسائل سے دوچار کر دیا ہے ، افسوس کہ امریکی انتظامیہ  نے معاہدوں پر بد دیانتی کا مظاہرہ کیا اور کورونا وائرس کے باوجود ہم پر اقتصادی اور دیگر پابندیوں کا ظلم جاری رکھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی انتظامیہ کے یہ اقدامات خود اس کےلیے نقصان دہ ہونگے اور جوہری معاہدے کا خاتمہ دنیا کےلیے بھی نقصان دہ ہوگا۔

ایرانی صدر نے بتایا کہ عالمی ایٹمی توانائی ایجنسی کے ساتھ ہمارا تعاون جاری ہے اور ہماری جوہری سرگرمیاں اس کے معائنہ کاروں کی زیر نگرانی جاری ہیں، اور میرا یورپی یونین سے مطالبہ ہے کہ وہ انسٹیکس اور سویٹزر لینڈ کے بعض مالی  اداروں کو ایران کےلیے زیادہ فعال بنانے کی  کوشش کریں۔

 فن لینڈ کے صدر نے بھی کہا کہ وہ جوہری معاہدے کی پابندی کے لیے کوشش کریں گے  جسے تمام فریقین کے لیے قابل اطلاق بنانے کی ضرورت ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: